رانا ثناء کیس میں گواہوں کی جان کو خطرہ ہے: شہریار آفریدی

وزیر مملکت برائے انسداد منشیات شہریار آفریدی نے رانا ثناء اللہ کو ڈرگ لارڈ قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان کے خلاف ثبوت موجود ہیں لیکن ہمارے گواہوں کی جان کو خطرات لاحق ہیں۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شہریار آفریدی کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی حکومت ڈرگ ڈیلرز کے مگر مچھوں پر ہاتھ ڈال رہی ہے، جب بھی سیاسی ڈرگ ڈیلرز پر ہاتھ ڈالا گیا تو اے این ایف کا میڈیا ٹرائل شروع کر دیا گیا۔

انہوں نے رانا ثناء اللہ کو ڈرگ لارڈ قرار دیتے ہوئے کہا کہ رانا ثنا اللہ نے وکالت کو اپنی آمدن کا ذریعہ بتایا، رانا ثناء اللہ کے پاس خریداری کے لیے اربوں روپے کہاں سے آئے انہوں نے اس کا جواب نہیں دیا۔

منشیات برآمدگی کیس: رانا ثناء کا ٹرائل شروع کرنے کی اے این ایف کی درخواست مسترد

شہریار آفریدی نے ایک بار پھر رانا ثناء اللہ کے کیس کو ٹیسٹ کیس قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا کہ ہمارے پاس رانا ثناء اللہ کے خلاف ثبوت اور گواہ موجود ہیں۔

پریس کانفرنس کے دوران وزیر مملکت شہریار آفریدی نے رانا ثناء اللہ کا مبینہ آڈیو پیغام بھی چلایا۔

وزیر مملکت کا کہنا تھا کہ ضابطہ فوجداری کے تحت ملزمان کے خلاف ثبوت عدالت میں پیش کیے گئے لیکن ہمارے گواہوں کی جان کو خطرہ ہے، اے این ایف کے گواہوں کے تحفظ کے لیے کیس راولپنڈی منتقل کیا جائے اور جیل میں روزانہ کی بنیاد پر ٹرائل کی اجازت دی جائے۔

انہوں نے کہا کہ رانا ثناء اللہ کھلے عام اے این ایف کو نشانہ بنا رہے ہیں، اے این ایف کے اہلکاروں کو کھلے عام دھمکیوں کا نوٹس لیا جائے۔

شہریار آفریدی نے بتایا کہ رانا ثناء اللہ کو 15کلو گرام ہیروئن سمیت گھر سے نہیں بلکہ سڑک سے گرفتار کیا، اے این ایف نے دو ہفتوں میں ثبوت پیش کیا اور ملزمان کو کاپیاں بھی فراہم کیں۔