عدلیہ پر حملے ہورہے ہیں، ریاست ججز کو زبردستی نکالنا چاہتی ہے، بلاول بھٹو زرداری

ملتان: پاکستان پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ نئے پاکستان میں بھی عدلیہ پر حملے ہورہے ہیں۔

پاکستان پیپلز پارٹی کے چیرمین بلاول بھٹو زرداری نے ملتان ہائی کورٹ بار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج بھی عدلیہ پر حملے ہورہے ہیں اور ججز کے خلاف سازشیں اور غیر جمہوری اقدامات کیے جارہے ہیںِ، سپریم کورٹ سے لے کر ہائی کورٹ کے ججز تک ریاست انہیں زبردستی نکالنا چاہتی ہے، جمہوری قوتوں پردباؤ ڈالنےوالےادارےنےانصاف کامذاق بنارکھاہے، چیئرمین نیب نےکہاشفاف احتساب کیاتوتحریک انصاف کی حکومت گرجائےگی، نئے پاکستان میں آمر کے بنائے ادارے کو جمہوری جماعتوں پر دباؤ ڈالنے کیلئے استعمال کیا جارہاہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ضیاء آمریت میں ملک کے آئین اور قانون کو اسلام کے نام پر بگاڑا گیا، معاشرے میں خاص سوچ پیدا کی گئی جس سے ملکی نظام، ثقافت، وفاقی اور جمہوریت کو نقصان پہنچا۔

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ نئے پاکستان میں بھی جعلی کیسز کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، نظام انصاف کو مذاق بنایا ہوا ہے، حکومت کے خلاف جو بھی بولتاہے ان کے خلاف نیب کو استعمال کیا جارہاہے، کراچی میں درج مقدمے کا ٹرائل پنڈی میں کیوں ہوتا ہے،

چیرمین پی پی پی نے مزید کہا کہ عدلیہ کی کہانی پیپلزپارٹی سےعلیحدہ نہیں کی جاسکتی، عوام انتظارمیں ہیں کہ عدلیہ تسلیم کرے ذوالفقار بھٹو بےگناہ تھے، عوام گواہ ہیں عدالتیں مظلوم کا ساتھ نہیں دیتیں،ہمارا نظام انصاف زیادہ تر ظالم کا ساتھ دیتا ہے، بھٹو کو انصاف نہیں دے سکے تو اس کی بیٹی کو تو انصاف دے دو۔