کورونا وائرس کے اثرات: رواں مالی سال پاکستان کی شرح ترقی 2.6 فیصد رہنے کی توقع

لاہور ( شکیل ملک) ایشیائی ترقیاتی بینک نے کہا ہے کہ اقتصادی بحالی کو کوششوں،زرعی پیداوار میں کمی اور کورونا وائرس کی وباء کے اثرات کی وجہ سے رواں مالی سال پاکستان کی شرح ترقی 2.6 فیصد رہنے کی توقع ہے۔جبکہ آئندہ سال بہتری کا امکان ہے اور 2021 میں جی ڈی پی کی شرح 3.2 فیصد ہوگی۔یہ بات اے ڈی بی نے اپنے 2020 کے تااہ سالانہ جائزے میں کہی ہے۔ اے ڈی بی کے مطابق پاکستان کے اقتصادی شعبے میں اقدآمات سے معاشی شعبے میں ناہمواریوں کے خاتمے سمیت جاری کھاتوں کے خسارے میں کمی آرہی ہے۔ پاکستان میں ایشیائی بینک کے کنٹری ڈائریکٹر Xiaohong Yang نے کہا ہے کہ اگر چہ پاکستان کی معاشی صورتحال میں بہتری آرہی ہے، کورونا وائرس کی وباءجیسے چیلنج سے نمٹنے کے لئے پوری قوم کو مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے۔ حکومت کے خصوصی پیکج اور خاص طور احساس پروگرام کو کورونا وباءسے نمٹنے اور کمزور اور غریب طبقے کی مدد کے لئے استعمال کیا جائے گا۔

رواں سال ٹڈی دل کے حملے کی وجہ سے کپاس،گندم اور دوسری بڑی زرعی اجناس کی پیداوار میں کمی کی وجہ سے ٹیکسٹائل اور لیدر جیسی برمدای صنعتیں متاثر ہوسکتی ہیں ایل سی ایم پہلی ششماہی کی طرح صنعتی پیداوار کا پچاس فیصد فراہم کریں گی۔

کورونا وائرس کی وجہ سے طلب اور ،برآمدات میں کمی سے پیدواری و کاروباری سرگرمیوں میں سست روی کی وجہ سے اقتصادی ترقی کی رفتار متاثر ہوسکتی ہے۔