کراچی میں پھر طوفانی بارش، سڑکیں تالاب بن گئیں، 7 افراد جاں بحق

 کراچی: کراچی میں ایک بار پھر طوفانی بارش کے سبب سڑکیں تالاب بن گئیں، ٹریفک جام ہوگیا جب کہ کرنٹ لگنے اور مختلف حادثات کے سبب 7 افراد جاں بحق ہوگئے۔

جمعہ کو مون سون کے چوتھے اسپیل کے تحت دوسرے روز بھی شہر کے بیشتر علاقوں میں گرج چمک کے ساتھ موسلا دھار بارش ہوئیں جس کی وجہ سے ایک بار پھر شہر کا نظام درہم برہم ہوگیا، سڑکیں تالاب کا منظر پیش کرنے لگیں، ٹریفک جام ہوگیا جس کے سبب مسافروں کا منٹوں کا سفر گھنٹوں میں طے ہوا۔

بارشوں کا سلسلہ شہر کے مضافاتی علاقوں سے شروع ہوا جس کے بعد شہر بھر میں کہیں درمیانی اور کہیں تیز بارشیں ہوئیں۔ ناظم آباد، بہادر آباد، کلفٹن، ڈیفنس، شارع فیصل، پی ای سی ایچ ایس، نیو کراچی، طارق روڈ، صدر، ایم جناح روڈ، خداددا کالونی، ٹاور، نارتھ ناظم اور نارتھ کراچی سمیت مختلف علاقوں میں بارشیں ہوئیں۔

محکمہ موسمیات کے مطابق جمعہ کو شہر میں سب سے زیادہ بارش پی اے ایف بیس مسرور پر 68.5 ملی میٹر ریکارڈ ہوئی، گلشن حدید 60، صدر 50، کیماڑی 47.3، پی اے ایف بیس فیصل 47، ناظم آباد 44.6، اولڈ ائرپورٹ 40.8، لانڈھی 37.5، یونیورسٹی روڈ 35.5، جناح ٹرمینل 28.8، سعدی ٹاؤن 25.2، نارتھ کراچی 23.9 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوئی۔

دوروز کے دوران شہر میں مجموعی طور پر 162.5 ملی میٹر ( 6 انچ سے زائد بارشیں ریکارڈ ہوچکی ہیں)۔ مون سون کے چوتھے اسپیل کی بارشیں محکمہ موسمیات کے اندازوں سے کئی گنا زیادہ رہیں کیوں کہ محکمہ موسمیات نے 3 روز کے دوران 100 تا 120 ملی میٹر بارشوں کی پیش گوئی کی تھی لیکن دو روز کے دوران شہر میں 162.5 ملی میٹر بارش ریکارڈ ہوچکی ہے۔

بارش کا سلسلہ گزشتہ روز کی طرح دوپہر کے وقت شروع ہوا، چند ایک علاقوں میں بارش کا سلسلہ کئی گھنٹے مسلسل جاری رہا، گرج چمک کے ساتھ ہونے والے بارشوں کی وجہ سے دوسرے روز بھی شہر کا پارہ معتدل رہا۔ زیادہ سے زیادہ درجہ حرارت 35 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ ہوا۔

شہر کا کم سے کم درجہ حرارت 25 ڈگری رہا۔ دوسرے روز بھی شہر میں سمندر کی جنوب مغربی ہوائیں بند رہیں جبکہ بلوچستان کی شمال مشرقی سمت کی ہوائیں چلیں۔ ہوا میں نمی کا تناسب صبح کے وقت 88 اور شام کو 96 فیصدرہا۔