اسلام آباد ہائی کورٹ: نیب ریفرنسز میں مریم نواز اور کیپٹن (ر) صفدر کی پیشی

اسلام آباد: اسلام آباد ہائی کورٹ میں العزیزیہ اور ایون فیلڈ ریفرنسز میں اپیلوں پر سماعت آج ہوگی، مریم نواز اور کیپٹن ریٹائرڈ صفدر عدالت میں پیش ہونگے، سیکیورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔

نواز شریف کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواستوں پر بھی سماعت ہوگی۔ سابق وزیراعظم نے موقف اختیار کیا کہ ‏بیرون ملک زیر علاج ہونے کے باعث اپیلوں کی سماعت کے موقع پر پیش نہیں ‏ہوسکتا، استدعا ہے کہ طبی بنیادوں پر حاضری سے استثنیٰ دیا جائے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ کورونا کے بعد لاک ‏ڈاؤن کی وجہ سے برطانیہ میں علاج مکمل نہیں ہو سکا، ضمانت میں توسیع کے لیے ‏کئی دستاویزات فراہم کیں، لیکن پنجاب حکومت نے طے شدہ منصوبے کے ‏تحت ضمانت میں توسیع کی درخواست مسترد کی۔

مریم نواز اور کیپٹن(ر) ‏صفدر کے وکیل امجد پرویز نے بھی چھٹیوں پر ہونے کے باعث ایون فیلڈ ریفرنس پر سماعت ‏ملتوی کرنے کی درخواست دائر کر دی۔ وکیل امجد پرویز نے کہا کہ 5 ستمبر تک چھٹیوں پر ہوں، سماعت اس کے بعد رکھی جائے۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی العزیزیہ، ‏ایون فیلڈ اور فلیگ شپ ریفرنس کے خلاف شریف فیملی اور نیب کی اپیلوں پر سماعت ‏کریں گے۔

دوسری جانب نیب نے ایون فیلڈ، العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز کی اپیلوں کے لیے پراسیکیوشن ٹیم تشکیل دے دی ہے۔ ذرائع کے مطابق نیب نواز شریف کی حاضری سے استثنی کی درخواستوں کی بھرپور مخالف کرے گا۔

نیب حکام کا کہنا ہے کہ نواز شریف مفرور ہیں، حاضری سے استثنی نہیں دیا جاسکتا، ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کی سزا برقرار، العزیزیہ میں سزا بڑھائی جائے جبکہ فلیگ شپ میں بریت کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔