پی ڈی ایم کی31 جنوری کی ڈیڈ لائن کا بھی وہی حال ہوگا جو31 دسمبرکا ہوا، وزیرخارجہ

اسلام آباد: وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم کے احتجاج، جلسوں سے یہ حکومت کہیں نہیں جائے گی اور ان کی 31 جنوری کی ڈیڈ لائن کا بھی وہی حال ہو گا جو 31 دسمبر کا ہوا۔

وفاقی وزیر شاہ محمود قریشی کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کو عوام کا اعتماد حاصل ہے وہ پی ڈی ایم کے کہنے پر کیوں مستعفی ہوں گے، میں پی ڈی ایم کو آج کہہ ریا ہوں کہ وزیراعظم عمران خان 31 جنوری کو مستعفی نہیں ہوں گے وہ 31 جنوری کا انتظار کیوں کرتے ہیں انہیں جو فیصلہ کرنا ہے ابھی کرلیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پی ڈی ایم کے احتجاج، جلسوں سے یہ حکومت کہیں نہیں جائے گی اور ان کی 31 جنوری کی ڈیڈ لائن کا بھی وہی حال ہو گا جو 31 دسمبر کا ہوا، اپوزیشن نے حکومت کو دباؤ میں لانے کیلئے جو بیانیہ تشکیل دیا تھا وہ دم توڑ چکا ہے، پی ڈی ایم، کراچی میں اسرائیل نامنظور ریلی نکالنے جا رہی ہے، سوچنے کی بات یہ ہے کہ انہیں اس کی ضرورت کیوں پیش آئی، دراصل اپوزیشن عوام کو دھوکہ دے رہی ہے۔
وزیر خارجہ نے کہا کہ اسرائیل کے حوالے سے ہمارا موقف واضح اور دو ٹوک ہے وزیر اعظم عمران خان کا بیان، میرا بیان اور وزارت خارجہ کی اسٹیٹمنٹس ریکارڈ پر موجود ہیں، اس پر ہم کل بھی قائم تھے اور آج بھی قائم ہے اور اب تو اسرائیل نے بھی وضاحت کر دی ہے، اس دوران سامنے آنے والا، مولانا اجمل قادری کا بیان تہلکہ خیز اور وضاحت طلب ہے (ن) لیگ کی قیادت کو بتانا ہوگا کہ مولانا اجمل قادری کس ایجنڈے پر اور کیا پیغام لیکر اسرائیل گئے،

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ خبر سامنے آ رہی ہے کہ سعودی عرب کا ایک بہت بڑا وفد جلد پاکستان آ رہا ہے جس میں ان کے وزیر خارجہ سمیت اہم شخصیات شامل ہوں گی یہ سب اس بات کی غمازی کرتا ہے کہ ہمارے سعودی عرب کے ساتھ دو طرفہ تعلقات مزید مستحکم ہو رہے ہیں، پاکستان اور سعودی عرب کے مابین گہرے تاریخی برادرانہ تعلقات ہیں، سعودی عرب نے نیامے ڈیکلریشن میں کھل کر پاکستان کا ساتھ دیا۔

بھارتی کے حوالے سے شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ “ای یو، ڈس انفولیب” نے بھارت کے گھناؤنے عزائم کو مزید بے نقاب کر دیا ہے، ہندوستان، پاکستان کے خلاف اپنی سرزمین استعمال کر رہا ہے اور میں نے گذشتہ دنوں، ثبوتوں پر مبنی ڈوزئیر کے ذریعے عالمی برادری پر واضح کیا کہ بھارت اپنی اندرونی صورتحال سے عالمی توجہ ہٹانے کیلئے فالس فلیگ آپریشن جیسا ناٹک رچا سکتا ہے جب کہ ہندوستان، دہشت گردوں کی تربیت اور کالعدم تنظیموں کی معاونت کر رہا ہے۔