پاکستانیوں کے لیے منعقدہ ایک کچہری میں باہمی تجارت کے فروغ کے لیے تجاویز

اکستان ہائی کمیشن اٹاوا اور قونصل جنرلز آف پاکستان ٹورنٹو،مانٹریال اور وینکوور کے اشتراک سے کینیڈا میں مقیم پاکستانیوں کے لیے ایک ای کچہری کا اہتمام کیا گیا جس میں کینیڈا اور شمالی امریکہ میں مقیم پاکستانیوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔
کینیڈا میں پاکستان ہائی کمیشن کے جاری کردہ اعلامیہ کے مطابق ایک گھنٹہ تک جاری رہنے والی ای کچہری کے نظامت قونصل جنرل آف ٹورنٹو عبد الحمید نے ادا کیے جبکہ پاکستان ہائی کمشنر رضا بشیر تارڑ نے ابتدائی اور اختتامی کلمات ادا کرتے ہوئے کینیڈا میں مقیم پاکستانیوں کو بروقت اور فوری قونصلر خدمات کی فراہمی کا یقین دلایا اور اس حوالے سے پاکستانیوں کی تجاویز اور آراء کا خیر مقدم کیا۔انہوں نے اپنے خطاب میں وزیر اعظم پاکستان عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی جانب سے بیرون ملک پاکستانی سفارت خانوں کی جانب سے ہر ماہ ای کچہری کے انعقاد کے فیصلے کوملک کی اعلیٰ قیادت کی نظر میں بیرون ملک پاکستانیوں کے پروقار مقام اور اہمیت کا عکاس قرار دیا۔
ای کچہری کے دوران شرکا کی جانب سے پاکستان اور کینیڈا کے مابین باہمی تجارت کے فروغ کے لیے کئی تجاویز دی گئیں اور حاضرین و سامعین کو بتایا گیا کہ کینیڈا نے پچھلے سال2020 میں 530 ارب ڈالر کی غیر ملکی مصنوعات در آمد کیں تاہم ان میں پاکستانی مصنوعات کا حصہ43 کروڑ ڈالر رہا جسے مزید بڑھایا جا سکتا ہے۔ای کچہری کے شرکا کو مزید بتایا کہ اس وقت ٹیکسٹائل،چمڑے اور کھانے پینے کی اشیاء کی کینیڈا میں مانگ ہے بالخصوص کینیڈا نے پچھلے سال ایک ارب ڈالر سے زائد مالیت کا غیر ملکی چاول در آمد کیا جس میں پاکستانی چاول کا حصہ محض ڈیڑھ کروڑ ڈالر مالیت کا رہا جسے مزید بڑھایا جا سکتا ہے کیونکہ پاکستانی چاول معیار، ذائقے اور خوشبو کے اعتبار سے انتہائی اعلیٰ معیار کا حامل ہے۔ای کچہری کے دوران کینیڈا میں مقیم پاکستانیوں کے مختلف سوالوں کے جواب میں بتایا گیا کہ فی الحال سٹیٹ بنک آف پاکستان کا پانچ ہزار روپے مالیت کے کرنسی نوٹ کو ختم کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے اور پاکستان کے قومی بنک نے فی الحال40,000 روپے مالیت کے بیرئیرز بانڈز کے اجرا ء کے خاتمے کا فیصلہ کیا ہے تاہم پاکستانیوں کو 31مئی2021 تک تبدیل کرانے کی اجازت ہے۔
کینیڈا میں پاکستانی سنگ مر مر کی درآمد کے امکانات کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں بتایا گیا کہ پاکستان نے پچھلے سال تین کروڑ ڈالر کا سنگ مر مر برآمد کیا تاہم اس کی زیادہ تر مقدار ہمسایہ ملک چین بھجوائی گئی تاہم کینیڈا میں بھی پاکستانی سنگ مر مر کی کھپت اور مانگ بڑھائی جا سکتی ہے جس کے لیے پاکستان ہائی کمیشن اور ٹورنٹو میں قائم پاکستانی ٹریڈ مشن ہر قسم کی معاونت اور راہنمائی فراہم کرنے کو تیار ہیں۔ای کچہری سے قونصل جنرل آف وینکوور جانباز خان اور قونصل جنرل آف مانٹریال عبد الحمید نے اشتیاق احمد عاقل نے بھی خطاب کیا اور شرکا کے سوالوں کے جوابات دیے۔