جاپان اور جرمنی کی سرحدی تجارت کے بیان پر وزیراعظم شدید تنقید کی زد میں

دوسری جنگ عظیم کے بعد جاپان اور جرمنی کی سرحدی تجارت سے متعلق وزیراعظم عمران خان کے بیان پر اُنہیں شدید تنقید کا سامنا ہے۔

وزیراعظم نے دورہ ایران کے دوران مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد سے گفتگو کے دوران کہا کہ اگر آپ ایک دوسرے سے تجارت کریں گے تو آپ کے تعلقات خودبخود مضبوط ہوجائیں گے۔

اس کی مثال دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ دوسری جنگ عظیم کے دوران لاکھوں سویلین ہلاک ہوئے جس کے بعد جرمنی اور جاپان نے فیصلہ کیا کہ وہ سرحد پر مشترکہ تجارتی صنعت لگائیں گے۔

یاد رہے کہ جاپان اور جرمنی کے درمیان تقریباً 9 ہزار 71 کلو میٹر ( 5 ہزار 636 میل) کا فاصلہ ہے، جرمنی براعظم یورپ اور جاپان براعظم ایشیا کے مشرق میں واقع ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے وزیراعظم عمران خان کو اِس بیان پر انہیں تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کتنے افسوس کی بات ہے کہ ہمارے وزیراعظم سمجھتے ہیں کہ جرمنی اور جاپان کی سرحد آپس میں ملتی ہے۔

BilawalBhuttoZardari

@BBhuttoZardari

? our Prime Minister thinks that Germany & Japan share a border. How embarrassing, this is what happenes when you @UniofOxford let people in just because they can play cricket.

Syed Talat Hussain

@TalatHussain12

Japan is an island country in East Asia located in the Pacific. Germany is in central Europe. They had the same location during the 2nd World War in which they were allies. But PM Imran thinks otherwise and says so before international audience.

Embedded video

1,106 people are talking about this

بلاول نے مزید کہا کہ ایسا تب ہوتا ہے جب آکسفورڈ یونیورسٹی والے صرف کرکٹ کی بنیاد پر لوگوں کو داخلہ دے دیں۔

صحافی طلعت حسین نے وزیراعظم کے اس بیان کی ویڈیو جاری کی اور طنزیہ انداز میں کہا کہ جاپان جزیرہ نما ملک ہے جو براعظم ایشیا میں ہے اور جرمنی وسطی یورپ میں اور دوسری جنگ عظیم کے دوران یہ دونوں ممالک اتحادی تھے لیکن وزیراعظم کچھ اور سمجھتے ہیں۔

Embedded video

Syed Talat Hussain

@TalatHussain12

Japan is an island country in East Asia located in the Pacific. Germany is in central Europe. They had the same location during the 2nd World War in which they were allies. But PM Imran thinks otherwise and says so before international audience.

2,604 people are talking about this