’فارمولان ون کار‘ بنانے والا بھی ندا یاسر کے حق میں بول پڑا

کراچی(نیوز ڈیسک) ’فارمولان ون کار‘ بنانے والا بھی ندا یاسر کے حق میں بول پڑا۔انسٹاگرام پیج پر کار بنانے والے نوجوان کے گروپ کے اہم رکن کی جانب سے ایک ویڈیو بیان شئیر کیا گیا۔ویڈیو میں وقار شارق وقار نامی ٹیم ممبر کی جانب سے واضح الفاظ میں ندا یاسر کو ٹرول کرنے کی مذمت کی گئی ہے۔شارق وقار کا وائرل کلپ سے متعلق کہنا ہے کہ یہ بالکل صحیح بات ہے کہ ندا یاسر کو شو سے پہلے موضوع اور مہمانوں سے متعلق جاننا چاہئیے تھا مگر ایک 5 سال پرانی ویڈیو اور ان کی لاعلمی پر ان کی ذات کو تنقید کا نشانہ بنانا درست عمل نہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ندا یاسر کی غلطی سے متعلق بھارتی چینلز بھی اب بیچ میں کود پڑے ہیں اور اس کو نہایت منفی انداز میں ٹی وی پر چلا رہے ہیں۔انہیں یہ پسند نہیں آیا ہے۔

ان کی ٹیم ندا یاسر پر بننے والے مذاق کو بالکل بھی سپورٹ نہیں کر رہے بلکہ وہ لوگوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ ندا یاسر کی ذات یا خاندان کو تنقید کا نشانہ نہ بنایا جائے۔خیال رہے کہ چند روز قبل ان کے پروگرام کی ایک پرانی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی، جس میں ندا یاسر ’فارمولا ریسنگ کار‘ اور انگریزی کے لفظ ’فارمولا‘ میں فرق کو سمجھ نہیں پا رہی تھیں۔میزبان کی پرانی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد ٹوئٹر پر ’ندا یاسر‘ کے نام کا ٹرینڈ ٹاپ فہرست میں بھی شامل ہوا اور لوگوں نے ان پر خوب تنقید کی تھی۔جہاں لوگوں نے ندا یاسر پر تنقید کی، ساتھ ہی وہیں ان کا مذاق بھی اڑایا گیا تھا اور چینل انتظامیہ سے میزبان کو ہٹانے کا بھی مطالبہ کیا گیا تھا۔صارفین نے کہا کہ کسی بھی ہوسٹ کو پروگرام کی میزبانی کرنے سے پہلے مہمانوں اور موضوع سے متعلق پتہ ہونا چاہئیے، اور پروگرام میں جس متعلق بات کرنی ہو اس پر مکمل تحقیق بھی کرنی چاہئیے۔شدید تنقید کے بعد ندا یاسر کا بھی موقف سامنے آ گیا ہے۔

انڈیپنڈنٹ اردو سے گفتگو میں انہوں نے کہا کہ وائرل ہونے والا کلپ 6 سے 7 سال پرانا ہے اور انہیں بالکل بھی اندازہ نہیں ہے کہ یہ اچانک کیسے نمودار ہوا اور پھر وائرل ہوگیا۔ ندا یاسر کا کہنا تھا کہ وہ ٹوئٹر پر نہیں ہیں اور انہیں کسی دوسرے ذریعے سے پرانی ویڈیو وائرل ہونے کا علم ہوا۔مارننگ شو ہوسٹ کا کہنا تھا کہ یہ کلپ دیکھ کر تو میں خود ہنس رہی ہوں، یہ مجھے بھی مضحکہ خیز لگ رہا ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ غلطی ہوگئی تھی اور اس غلطی پر میں ہنس رہی ہوں، آئندہ کوشش کروں گی کہ مکمل تحقیق کرکے بات کروں۔ندا یاسر نے مزید کہا کہ یہ اتنی پرانی بات ہے کہ صحیح طرح یاد بھی نہیں کہ ہوا کیا تھا، اگر مجھے یاد ہوتا تو میں کچھ بتاسکتی تھی کہ یہ کن حالات میں ہوا تھا، کیا مسائل تھے، ایسا کیا ہوا تھا کہ وہ بالکل اس طرح سے انجانوں کی طرح سوال کررہی ہیں۔ میزبان نے مزید کہا کہ مجھے ایک بات کا شکوہ ہے کہ میں نے ہزاروں بہت اچھے شو کیے ہیں، جس کا فیڈ بیک بھی بہت اچھا آتا ہے، مگر ان میں کی گئی کوئی بات کبھی بھی وائرل نہیں ہوتی اور اس پر مجھے بہت زیادہ دکھ ہوتا ہے۔

متعلقہ خبریں