پنجاب اور خیبر پختونخوا میں ڈینگی کی صورت حال مزید خراب ہوگئی،508نئے کیسز سامنے آگئے

اسلام آباد( نیوز ڈیسک ) صوبہ پنجاب اور صوبہ خیبرپختونخوا میں ڈینگی کی صورتِ حال مزید خراب ہوگئی ، پنجاب بھر سے ڈینگی کے مزید 508 مریض سامنے آئے ہیں جن میں سے 373 کا تعلق لاہور کے ہیں ، خیبر پختو نخوا میں 24 گھنٹوں کے دوران ڈینگی کے 142 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جس کے بعد صوبے میں مریضوں کی مجموعی تعداد 3 ہزار 938 ہو گئی ہے۔محکمہ صحت کی جانب سے بتایا گیا ہے کہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں بھی مزید 152 شہری ڈینگی سے بیمار ہوئے ، اسلام آباد کا علاقہ ترلائی ڈینگی سے سب سے زیادہ متاثر ہے جب کہ وفاقی دارالحکومت کے دیہی علاقوں میں اب تک 2000 کے قریب افراد ڈینگی کا شکار ہو چکے ہیں اسی طرح صوبہ سندھ میں بھی مزید 53 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 32 مریضوں کا تعلق کراچی سے بتایا گیا ہے۔

دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدارنے ڈینگی پر قابو پانے کے لئے موثر انداز میں مہم چلانے کاحکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ ڈینگی کا پھیلائو روکنے کیلئے متعلقہ محکمے اور ادارے اپنا بھرپور کردار ادا کریں اورانسداد ڈینگی کے لئے وضع کردہ پلان پر عملدرآمدمن وعن یقینی بنایا جائے اوران ڈور اور آؤٹ ڈور سرویلنس پر بھر پور توجہ دی جائے ، وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ انتظامی افسران انسداد ڈینگی اقدامات کی موثر مانیٹرنگ جاری رکھیں ، سرکاری ونجی عمارتوں کی موثرسرویلنس کر کے ڈینگی لاروا کا خاتمہ کیا جائے ، ٹائر شاپس اورقبرستانوں میں مسلسل نگرانی جاری رکھی جائے ، انسداد ڈینگی کے اقدامات میں کوتاہی کسی صورت برداشت نہیں۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے مریضوں کے علاج معالجہ کے لئے مزیداقدامات کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ ہسپتالوں میں ڈینگی وارڈز اور کاؤنٹرزپرمریضوں اورانکے تیمارداروں کو تمام ضروری سہولتیں مہیا کی جائیں ،شہری اپنے گھروں اورچھتوں میں کسی بھی جگہ پر پانی جمع نہ ہونے دیں اور حفاظتی تدابیر پر عمل کریں۔

متعلقہ خبریں