پٹرولیم لیوی30 روپے سے ساڑھے 5 روپے پر لاچکے ہیں،حماد اظہر

اسلام آباد ( نیوز ڈیسک ) وفاقی وزیر توانائی حماد اظہر نے کہا ہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ آئی ایم ایف کے کہنے پر نہیں کیا، پٹرولیم لیوی 30 روپے سے ساڑھے 5 روپے پر لاچکے ہیں، اب مزید ریلیف دینے کی گنجائش بہت کم رہ گئی ہے۔ انہوں نے نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عالمی منڈی میں طلب اور رسد میں اضافہ ہواہے، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرنا سب سے مشکل کام ہے۔انہوں نے کہا کہ پٹرولیم لیوی 30 روپے سے ساڑھے 5 روپے پر لاچکے ہیں، پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ریلیف دینے کی حکومتی گنجائش کم ہورہی ہے، حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا بوجھ خود برداشت کررہی ہے۔

پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ آئی ایم ایف کے کہنے پر نہیں کیا۔انہوں نے کہا کہ بھارت اور بنگلادیش میں غربت کی شرح سب سے زیادہ ہے، عالمی منڈی میں ایل این جی کی قیمت آسمان کو چھو رہی ہے، پاکستان میں بھارت کے مقابلے گیس سستی ہے۔ دوسری جانب وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ عالمی سطح پر اشیاء مہنگی ہونے کے باعث مہنگائی نیچے نہیں جائے گی، انہوں نے واشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ عالمی سطح پر اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہورہا ہے، اس لیے مہنگائی نیچے نہیں جائے گی، مہنگائی تب نیچے آئے گی جب دنیا میں کورونا کے اثرات کم ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ کم آمدنی والوں کا ہمارے پاس ڈیٹا بیس آگیا ہے، ملک کی40 فیصد آبادی کو آٹا، چینی اور دالوں پر ٹارگٹڈ سبسڈی دیں گے۔انہوں نے کہا کہ اگلے 4 سے 5 سال میں ٹیکس ٹو جی ڈی پی شرح 20 فیصد تک لے کر جائیں گئے، توانائی سیکٹر کے لیے معاہدے ہو چکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ عالمی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) سے ایک ارب ڈالر ملنے کی توقع ہے،آئی ایم ایف کو اعدادوشمار دے دیے ہیں وہ آئندہ دو چار روز میں توثیق کریں گے۔ امریکی نائب معاون وزیرخارجہ سے ملاقات میں کہا ہے کہ غلطیاں دونوں اطراف سے ہوئیں، اب آگے بڑھنا چاہیے۔

متعلقہ خبریں