طرابلس میں بسنے والے پاکستانی محفوظ مقامات پر منتقل ہوجائیں، دفتر خارجہ

اسلام آباد: ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے انتباہ کیا ہے کہ طرابلس میں بسنے والے پاکستانی محفوظ مقامات پر منتقل ہوجائیں۔

لیبیا میں سیکیورٹی کی کشیدہ صورتحال کے پیش نظر دفترخارجہ نے پاکستانی شہریوں کے لیے ایڈوائزری جاری کردی ہے، دفترخارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان میں لیبیا بالخصوص طرابلس میں مقیم پاکستانیوں کو تنبیہ کی گئی ہے کہ طرابلس میں بسنے والے پاکستانی محفوظ مقامات پر منتقل ہوجائیں۔

ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹرمحمد فیصل نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ایڈوائزی جاری کی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی شہری لڑائی والے علاقوں میں جانے سے اجتناب کریں اور بیرون ممالک بسنے والے پاکستانی لیبیا جانے کا پروگرام ملتوی کردیں۔

ترجمان دفترخارجہ نے بتایا ہے کہ لیبیا میں مقیم پاکستانی شہریوں کی مدد کے لیے وزارت خارجہ میں کرائسس مینجمنٹ سیل کام کر رہا ہے جب کہ طرابلس میں پاکستانی سفارتخانہ بھی اپنے شہریوں کی معاونت کے لیے کام کر رہا ہے۔

واضح رہے کہ لیبیائی دارالحکومت طرابلس کے گنجان آباد علاقوں میں اس وقت اقوامِ متحدہ کی تائید کردہ حکومتی معاہدے کے تحت سرکاری افواج ( جی این اے ) اور اس کی مخالف باغی فورسز لیبیائی نیشنل آرمی ( ایل این اے ) کے درمیان گزشتہ تین ہفتوں سے لڑائی جاری ہے جس میں سینکڑوں افراد لقہ اجل بن چکے ہیں۔

ہلالِ احمر کے مطابق اس وقت ہسپتالوں جان بچانے والی ادویہ کی شدید قلت پیدا ہوچکی ہے جبکہ ہزاروں لوگ محفوظ مقامات پر منتقل ہوچکے ہیں۔