امریکا میں روس کی جاسوس خاتون کو 18 ماہ قید

واشنگٹن: امریکا میں روسی خاتون ماریہ بوتینا کو جاسوسی کے الزام میں 18 ماہ قید کی سنادی گئی۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکا کی ضلعی عدالت نے روسی اسلحہ ساز ادارے کے لیے کام کرنے والی ماریہ بوتینا کو امریکا کے اعلیٰ سیاسی شخصیات سے تعلقات استوار کرکے اہم راز کی حصول کی کوشش کے الزام میں 18 ماہ قید کی سزا سنادی۔

ماریہ بوتینا 9 ماہ سے پولیس کی حراست میں ہیں اس عرصے کو بھی ان کی سزا میں شامل کرلیا جائے گا، سزا مکمل کرنے کے بعد روسی خاتون کو ملک بدر کردیا جائے گا۔ ماریہ امریکا میں تعلیم کی غرض سے مقیم تھیں اور نیشنل رائفل ایسوسی ایشن کے معاملات میں اثرانداز ہونے کے لیے امریکی سیاست دانوں سے اپنے تعلقات استعمال کیے تھے۔

واضح رہے کہ ماریہ نے گرفتاری کے بعد پولیس کو دیے گئے بیان میں امریکی سیاست دانوں تک رسائی حاصل کر کے روابط بڑھانے اور نیشنل رائفل ایسوسی ایشن میں مداخلت کا اعتراف کیا تھا۔ امریکی صدر بھی نیشنل رائفل ایسوسی ایشن کے رکن ہیں اور صدر ٹرمپ پر صدارتی انتخابات میں کامیابی کے لیے روس کی مدد لینے کا الزام بھی لگتا رہا ہے۔