نوازشریف کا تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کے بعد وطن واپسی کا فیصلہ، تاریخ بھی بتادی گئی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک ) وزیراعظم عمران خان کے خلاف عدم اعتماد کی کامیابی کی صورت میں سابق وزیراعظم نوازشریف ملک واپس آ جائیں گے۔اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق علاج کے لیے لندن جانے والے نوازشریف نے عدم اعتماد کامیاب ہونے کی صورت میں پاکستان واپسی کا فیصلہ کیا ہے۔نوازشریف نے تیاری شروع کر دی ہے کہ عدم اعتماد کامیاب ہونے کی پر نوازشریف اپریل کے آخر پر سعودی عرب جائیں گے جہاں وہ رمضان المبارک کا آخری عشرہ مدینہ منورہ میں گزاریں گے۔

رپورٹ کے مطابق حالات کو دیکھتے ہوئے نوازشریف سعودی عرب سے براہ راست پاکستان آ سکتے ہیں یا پھر دوبارہ کچھ روز کے لیے لندن قیام کرکے مئی کے پہلے ہفتے میں پاکستان واپس آئیں گے۔سابق وزیراعظم کے معالج ڈاکٹر عدنان بھی لندن پہنچ چکے ہیں جہاں وہ دیگر معالجی سے مشاورت کریں گے،نوازشریف نے اپنے اہل خانہ کے قریبی افراد اور اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کو بی آگاہ کر دیا۔نوازشریف کے ترجمان محمد زبیر کا کہنا ہے کہ عدم اعتماد کی تحریک کامیاب ہونے کے بعد نوازشریف وطن آئیں گے اور اپنے خلاف عدالتی فیصلوں کا سامنا کریں گے۔

انہوں نے کہا شہباز شریف وزیراعظم بننے جا رہے ہیں،عمران خان اقلیتی حکومت چلا رہے ہیں، ان کے پاس اکثریت نہیں اخلاقی طور پر عمران خان چلے جائیں گے۔دوسری جانب چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہےکہ 14 روز میں اسمبلی کا اجلاس نہ بلانا آئین شکنی ہے، آئین شکنی پر ہم عدالت سے رجوع کریں گے۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بلاول کا کہنا تھا کہ بزدل کپتان عدم اعتماد کے ووٹ سے بھاگ رہا ہے، جو کپتان جیتنے والا ہو وہ نہیں بھاگتا، آئین میں ہےکہ عدم اعتماد پیش ہونےکہ 14 دن میں اسپیکرکو اجلاس بلانا ہے، عدم اعتماد سے متعلق آئین شکنی پر ہم سپریم کورٹ جارہے ہیں، اسپیکر کے خلاف متحدہ اپوزیشن کے متفقہ فیصلےکے تحت چلیں گے۔

متعلقہ خبریں