تحریک انصاف حکومت کے آخری سال میں ملک میں صنعتی ترقی ایوب خان کے سنہری دور کی طرح ہو رہی تھی

لاہور (نیوز ڈیسک) معروف ماہر معیشت نے تحریک انصاف حکومت کے آخری سال میں ملک میں ہونے والی صنعتی ترقی ایوب خان کے دور جیسی صنعتی ترقی قرار دے دی۔ تفصیلات کے مطابق معروف ماہر معیشت ڈاکٹر اشفاق حسن کی جانب سے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے گزشتہ حکومت اور موجودہ حکومت کی معاشی پالیسیوں کے حوالے سے خصوصی تبصرہ کیا گیا۔ڈاکٹر اشفاق حسن کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف حکومت کے آخری سال میں ملک میں صنعتی ترقی ایوب خان کے سنہری دور کی طرح ہو رہی تھی۔ ایکسپورٹ اور ترسیلات زر ملکی تاریخ میں سب سے زیادہ رہیں، عمران خان دور میں ٹرین پٹڑی پر چڑھ گئی تھی لیکن اب تو ٹرین پٹڑی سے ہی اتر گئی ہے۔

دوسری جانب عمران خان کا کہنا ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں نے 31 ارب ڈالر ہماری حکومت میں بھیجے، کسانوں کو پہلی دفعہ پورا معاوضہ ملا، 50 سال بعد ہماری حکومت میں ڈیم بننا شروع ہوئے، آنے والی نسلوں کے لیے ہم نے10ارب درخت لگائے، 1 ہزار ارب کی این ایچ اے میں بچت کی، (ن) لیگ کے مقابلے میں سستی سڑکیں بنوائیں، ریکوڈک کیس میں ملک کو جرمانے سے بچایا، کارکے کیس میں پاکستان کو 200 ارب کے جرمانے سے بچایا۔تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعظم عمران خان نے کوہاٹ جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شہبازشریف نے وزیراعظم بننے کے لیے بڑی محںت کی۔ چیری بلاسم شہبازشریف کو وزیراعظم بننے کا بڑا شوق تھا، شہبازشریف نے بڑی دیر سے اچکن سلوائی ہوئی تھی، شہبازشریف کے پاس جوتے پالش کرنے کا فن ہے، شہبازشریف فوجی اورامریکی بوٹ بہت اچھےپالش کرتاہے۔ لیکن یہ پھنس گئے ہیں، ان کے پیچھے ٹائیگر ہے اور آگے سمندر ہے، امپورٹڈ حکومت خوفزدہ ہے، جدھر سے امپورٹ ہوئے ادھر سے قیمتیں بڑھانے کا حکم ملا ہے، امپورٹڈ حکومت پٹرول، ڈیزل کی قیمتیں بڑھانے لگی ہے۔یہ اب امریکیوں کو کہیں گے ڈالر دو ورنہ عمران پھر آ جائے گا، امریکیوں کوجانتا ہوں وہ ایسے ان کو ڈالرنہیں دیں گے۔ امریکی پہلے مزیدغلامی کرائیں گے پھر ڈالر دیں گے، امریکی کہیں گے فارن پالیسی ان کے حکم پر چلے گی، امریکا کہے گا روس سے سستا تیل نہیں منگوانا، ہم نے روس سے 30فیصد سستی گندم اورتیل کامعاہدہ کرلیاتھا،انہوں نے آتے ہی روس سے تمام معاہدے ختم کر دیئے، غلاموں کو روس سے معاہدہ ختم کرنے کا حکم ملا تھا۔

متعلقہ خبریں