پاکستان میں کاروباری طبقے کا اعتماد کم اور سرمایہ کاری منفی اثر لے رہی ہے: فچ

بین الاقوامی کریڈٹ ایجنسی ’فچ‘ نے پاکستان کی معیشت کے حوالے سے کہا ہےکہ کاروباری طبقے کا اعتماد کم ہورہا ہے اور سرمایہ کاری منفی اثر لے رہی ہے۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے معاہدے پر تبصرہ کرتے ہوئے فچ کی رپورٹ میں کہا گیا ہےکہ آئی ایم ایف سے 8 مہینوں کے بعد معاہدہ طے پاگیا ہے، آئی ایم ایف پروگرام میں اقتصادی اور مانیٹری پالیسیاں سخت رہیں گی، آئی ایم ایف پروگرام قلیل مدت میں معیشت کے لیے منفی ہوگا۔

آئی ایم ایف مذاکرات: پاکستان کی 500 ارب روپے کے نئے ٹیکسز لگانے کی یقین دہانی

فچ کے مطابق آئی ایم ایف پروگرام کے بعد اسٹیٹ بینک نے 150بیسسز پوائنٹس بڑھائے ہیں، آئی ایم ایف پروگرام کے وقت ڈالر 142 روپے کا تھا۔

فچ کی رپورٹ میں بتایا گیا ہےکہ پاکستان کی معاشی نمو رواں مالی سال میں 3.2 فیصد رہے گی، مالی سال 2020 میں معاشی نمو 2.7 فیصد رہے گی، مہنگائی بڑھے گی اور قوت خرید کم ہوگی۔

فچ کے مطابق معاشی نمو حکومتی ہدف سے کم رہے گی، خام تیل کی قیمتوں کی وجہ سے درآمدات بڑھیں گی، اسٹاک مارکیٹ کا گرنا معیشت پر اعتماد کو کم کررہا ہے، جولائی 2018 سے اسٹاک مارکیٹ 14 فیصد گر کر 2016 مارچ کی سطح پر آگئی ہے۔

فچ رپورٹ میں مزید کہا گیا ہےکہ کاروباری طبقے کا اعتماد کم ہورہا ہے، سرمایہ کاری منفی اثر لے رہی ہے، سی پیک سرمایہ کاری معیشت کو سپورٹ فراہم کرے گا۔