راہول گاندھی کانگریس پارٹی کی صدارت سے مستعفی

نئی دہلی:  بھارت میں سونیا گاندھی کے بیٹے راہول گاندھی نے کانگریس پارٹی کی صدارت سے استعفیٰ دے دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق راہول گاندھی نے اپنی جماعت کو ایک خط لکھا جس میں کہا کہ میرے وجود کا ہر حصہ بی جے پی کے نظریہ کا مخالف ہے، یہ جنگ ہزاروں سال پرانی ہے، یہ ہمیشہ بھارت کو نفرت کی بنیاد پر تقسیم کرنا چاہتے رہے ہیں۔

NDTV

@ndtv

Lead story now on http://ndtv.com  said the Congress Working Committee, the party’s top decision-making body, should call a meeting at the earliest and decide on a new party chief.

Read here https://www.ndtv.com/india-news/rahul-gandhi-says-congress-should-decide-on-new-president-without-further-delay-im-no-longer-party-p-2063332 

View image on Twitter

NDTV

@ndtv

"Many of my colleagues suggested that I nominate the next Congress President. While it is important for someone to lead our party, it would not be correct for me to select that person”:

Read here https://www.ndtv.com/india-news/rahul-gandhi-says-congress-should-decide-on-new-president-without-further-delay-im-no-longer-party-p-2063332 

View image on Twitter
35 people are talking about this

ان کا کہنا تھا کہ آر ایس ایس کا قبضہ ہمارے ملک اور آئین پر مکمل ہوچکا ہے، ان کے قبضہ سے ملک چھڑانے کے لیے ناقابل تصور تشدد اور تکلیف کا سامنا کرنا پڑے گا، بی جے پی منظم طریقے سے ہر آزاد آواز کو دبا رہی ہے۔

 

راہول گاندھی کا کہنا تھا کہ بھارت میں میڈیا آزاد نہیں ہے، الیکشن میں ہمارا مقابلہ ایک سیاسی جماعت سے نہیں بلکہ پوری ریاست سے تھا، ہر ادارہ اپوزیشن کے خلاف کام کر رہا تھا، بھارت کو بی جے پی سے بچانے کیلئے کانگریس کی نئی قیادت کو سخت فیصلے لینا پڑیں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن میں ناکامی کی ذمہ داری مجھ سمیت باقی عہدہ داروں پر عائد ہوتی ہے جس کے بعد میں نے پارٹی کی صدارت سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کیا ہے جو اٹل ہے۔